Sardar Zubair

سوچ بدلے گی تو ملک بدلے گا

Political

تبدیلی ہمیشہ سوچ بدلنے سے آتی ہے جب ایک انسان یہ فیصلہ کر لیتا ہے کہ جو میں کر رہا ہوں آئندہ ایسا نہیں کروں گا اور جو میں نہیں کر رہا کل سے وہی کروں گا تو تبدیلی آ جاتی ہے. ایک لمحے کے لیے فرض کریں ، کیا کبھی آپ نے سوچا ہے کے مجھے لائن میں لگ کے اپنا کام کروانا چاہیے بجاے لائن کراس کر کے یا پیسے دیے کر؟ کیا کبھی اپ نے وی آئی پی موومنٹ کے خلاف آواز اٹھائی ہے، سڑک بیچ ٹریفک اھل کار سے پوچھا ہے سر جی روڈ کیوں بلاک کی ہوئی ہے ؟ ہسپتال کی ایمرجنسی میں ڈاکٹر کو ٹانگ پر ٹانگ رکھ کر بیٹھے دیکھ کہ کبھی غصّہ آیا آپکو ؟ نادرا دفتر میں لائن چھوڑ کر اندر جانے والے آدمی سے آپ نے روک کے پوچھا کے سر جی لائن میں لگیں اندر کہاں جا رہے ہیں، آپنی گاڑی نام کرواتے وقت فیس سے زیادہ پیسے مانگنے پر کبھی تحقیق کی کے زیادہ پیسے کس چیز کے بھائی جان ؟ ان سب سوالوں کا جواب یقینن نہ میں ہے تو پھر تبدیلی کہاں سے آے گی ، میرے اور آپ کے سامنے چلتی گاڑی سے کیلے کے چھلکوں کا شاپر باہر آتا ہے، روڈ کنارے لوگ ناڑہ کھول کے کھڑے ہوتے ہیں ، ڈسٹ بن کے ڈبے کی بغل میں کوڑے کا تھیلا چھوڑ آتے ہیں ، جس پارک میں سارا دن بیٹھے رہتے ہیں وہیں کوڑے کا ڈھیر لگا کہ آتے ہیں اور سب سے بڑکے آپ نے کبھی اپنے بچے کے اسکول میں جا کر اسکی تربییت کا سوال کیا ؟ کیوں کے آج کل اسکول صرف تعلیم ہی دیتے ہیں. دیکھو میرے بھائی بہت سارے کام ہمیں خود بھی کرنے ہوں گے وہ کام نہ عمران خان کر سکتا ہے نہ نواز شریف اور نہ آصف زرداری ، ایک آدمی جو مصروف سڑک کے بیچ میں ناڑہ کھول کے کھڑا ہو جاتا ہے اسکو حکومت نہیں روک سکتی اسکو میں نے آپ نے روکنا ہے.

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *