Sardar Zubair

جمعہ۵ اکتوبرپاکستان کی سیاست کا سیاہ دن

Political

جمعہ۵اکتوبرپاکستان کی سیاست کا سیاہ ترین دن ہے ، یہ جو الفاظ ہیں جن کے ساتھ ایک عام پاکستانی کا کوئی تعلق نہیں ہوتا اور نہ ہی ایک عام شخص کو اس جملے سے کوئی دلچپسی ہے. اگر ہم ماضی پر نظر دوڑائیں تو اس طرح کے جذباتی الفاظ ہمیں ہر اس موقع پر سننے کو ملتے ھيں جب کبھی بھی ایک عام پاکستانی کے لیے کوئی خیر کی خبر نکلی ہو کل ہی کی بات ہے کہ پنجاب کے سابق وزیر اعلی محترم جناب شہباز شریف صاحب آشیانہ ہاؤسنگ سکیم میں نیب کے ہاتھوں گرفتار ہوئے تو محتدہ اپوزیشن کا متحدہ جملہ یہی تھا کہ جمعہ۵اکتوبر پاکستان کی سیاست کا سیاہ ترین دن ہے. اب سوچنے کی بات یہ ہے کہ کیا شہباز شریف صاحب بیگناہ ہیں ؟ کیا انکے ساتھ زیادتی ہو رہی ہے ، ایک سادھ لوح آدمی بھی سمجتا ہے کہ شہباز شریف نے ضرور ایسا کچھ کیا ہو گا جس پر انہیں نیب نے ہتھکڑی لگائی ہے شہباز شریف کے چند بہترین کام بھی ہیں جن سے کوئی بھی آدمی انکاری نہیں ہو سکتا مگر یہ چیز بھی روز روشن کی طرح عیاں ہے کہ پنجاب کے زیادہ تر ٹھیکے ذاتی پسند نہ پسند کی بنیاد پر دیے گئے ہیں اور اس کا اعتراف فواد حسسن فواد نیب کے سامنے کر بھی چکے ہیں اب مضحکہ خیز چیز اس سارے کھیل میں یہ ہے کہ تمام تر پیسہ غریب آدمی کے نام پر بنایا گیا ہے چاہيے وہ صاف پانی ہو، آشیانہ سکیم ہو ، لیپ ٹاپ سکیم یا پھر میٹرو پروجیکٹ ہو بظاھر ان تمام پروجیکٹس کا تعلق غریب آدمی سے تھا اور پھر غریب آدمی کے جذبات کے ساتھ کھلواڑ ہوا

اب ساری مخالف سیاسی پارٹیاں اندرونے خانہ اس بات پر شدید ذہنی دباؤ کا شکار ہیں کہ کہیں ہماری باری بھی نہ آ جائے جو یقینن بس کچھ ہی دور ہے پاکستان شاید دنیا کا واحد ملک ہے جہاں اپوزیشن تب اکھٹی ہوتی ہے جب انکا کوئی ذاتی مفاد ہوتا ہے حالانکہ ہونا یہ چاہیے کہ جب احتساب کی بات ہو تو ہمیں کلّی طور پر اس عمل کو خراج تحسین پیش کرنا چاہیے دنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں احتساب ہمشہ اوپر سے ہی شروع ہوتا ہے. حال ہی میں سعودی عرب میں شاہی خاندان سے اربوں کا لوٹا ہوا مال برآمد کیا گیا ہے ، چین میں سینکڑوں لوگوں کو جیل اور پھانسی ہوئی لیکن وہاں نہ نظام کو خطرہ ہوا نہ جموریت کو کیوں کے وہاں کی عام عوام سجمتی ہے کہ یہ انکا پیسا ہے جو لوٹا گیا ہے ، اس کے برعکس ہماری بھولی بھالی عوام کو چند ایک ………… پروجیکٹس دے کر انکا دل بہلا دیا جاتا ہے اور عمومّا یہ منصوبے عام آدمی کی زندگی بہتر کرنے میں کوئی کلیدی کردار ادا نہیں کر رہے ہوتے ضرورت اس امر کی ہے کہ ہمیں ایک قوم کر طور پر متحد ہونا چاہیے اور خاص کر اس کرپشن کے اس نا سور کو جڑ سے اکھاڑنے میں کردار ادا کرنا چاہیے

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *