Sardar Zubair

دو طرح کے لوگ

Political

ہر معاشرے میں دو طرح کے لوگ ہوتے ہیں ایک وہ لوگ جو سو اندھیروں میں بھی روشنی ڈھونڈ لیتے ہیں اور اپنے فیصلوں سے دنیا بدل دیتے ہیں وہ اپنے آپ کو لوگ کیا کہیں گے جیسے مایوس فقروں سے میلوں دور رکھتے ہیں اور اپنی منزل کی جستجو میں کوشاں رہتے ہیں دوسری قسم کے لوگ دن کی روشنی میں بھی اپنے آپ کو اندھیرے میں دیکھ رہے ہوتے ہیں یہ لوگ ، لوگ کیا کہیں گے کے مایوس اصول پر کاربند ہوتے ہیں انکے تمام فیصلے دوسرے لوگ کرتے ہیں یا دوسرے لوگوں کی مرضی سے ہوتے ہیں عمران خان کے بارے میں ایک بات انکے ناقد بھی کرتے اور مانتے ہیں کہ یہ آدمی اپنی دھن کا پکا ہے ، اسکی سوچ میں تسلسل ، ارادے میں پختگی جنوں رہتا ہے .دنیا کیا کہے گی مجھے کوئی پرواہ نہیں عمران خان کی ساری حیاتی کا جائزہ لیا جائے تو اس مرد کامل نے ہمیشہ وہی کام کیا ہے جس کے بارے میں عام لوگ یہی خیال کر رہے تھے کے یہ نا ممکن ہے اسکی مثال کرکٹ سے لے کر وزیر اعظم بننے تک کا سارا سفر ہے عمران خان اپنے ارادے میں کتنا پکا ہے اسکے لیے دو واقعات کا ذکر کرنا ضروری سمجتا ہوں زلفی بخاری عمران خان صاحب کا ذاتی دوست تھا ، الیکشن کے دنوں میں یہ ہاٹ ٹاپ رہا کے جناب زلفی بخاری صاحب چونکہ نیب کے ملزم ہیں اس لیے عمران خان صاحب کو اپنے آپ کو ان سے دور رکھنا چاہیے ، پھر ٹی وی پر پورے زور او شور سے ہنگامہ برپا ہوا ، عمران خان نے ان سب تحفظات کے باوجود زلفی بخاری کو وزارت بیرون ملک مقیم پاکستانی و انسانی وسائل کا ہیڈ لگا دیا مطلب  مجھے کوئی پرواہ نہیں پھر عثمان بزدار صاحب جن کو کوئی آدمی جانتا تک نہیں تھا انکو پاکستان کے سب سے بڑے صوبے کا وزیر اعلی لگا دیا ، میڈیا پر تنقید ہوئی ، پارٹی کے اندر لوگوں نے انکی مخالفت کی لیکن مجھے کوئی پرواہ نہیں اب لوگ ڈالر کے اوپر جانے اور کمزور معیشت کا رونا رو رہے ہیں اور بظاھر حالات بھی ایسے ہیں مجھے قوی امید ہے کے ایک دن پاکستان ایک مضبوط معیشت بن کر ابرے گا اور یہی عمران خان کی ٹیم اس ملک کے حالات کو سدھارے گی انشا الله

 

1 thought on “دو طرح کے لوگ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *